میلکم ایکس ۔۔۔امریکی پادری کے گھر پیدا ہونے والے ایک مسلمان کی داستان حیات،ایک مسلم ہیرو کی کہانی.

وہ ایک سیاہ فام امریکی پادری کے گھر پیدا ہوئے،چھ سال کی عمر میں ان کے والد کو سفید فام امریکیوں نے ٹرین کی پٹری میں رکھ کر بے دردی سے ان کا سر کچل دیا۔ان کی والدہ 34 سال کی عمر میں بیوہ ہوگئی والدہ پر آٹھ بچوں کی کفالت کا بوجھ آ پڑا،والدہ

نے سفید فام امریکیوں کے گھروں میں کام کاج شروع کر دیا انہیں سیاہ فام ہونے کی وجہ سے کچھ عرصہ بعد کام سے فارغ کر دیا جاتا ۔وہ گھر گھر کی دہلیز پر دستک دے کر تھک چکی تھی کہیں کام نہیں مل رہا تھا گھر میں بچے فاقے کاٹ رہے تھے،اس صورتحال نے انہیں ذہنی مریض بنا دیا انہیں ہسپتال داخل کرایا گیا ہسپتال سے پاگل خانے بھیجا گیا جہاں 26 سال وہ پاگلوں کے ساتھ رہی.بچین میں یتیمی،ممتا کی زخمی روح اور بالآخر ماں کا پاگل ہونا ان دکھوں بھرے حالات کی آغوش میں میلکم ایکس کا بچپن گزر رہا تھا، سفید فاموں کے ہاتھوں والد کے قتل نے انہیں سوچنے پر مجبور کیا تھا وہ گھنٹوں تنہائی میں بیٹھ کر سوچتا کہ میرے والد کا سیاہ فام ہونا اتنا بڑا جرم تھا کہ انہیں بے دردی سے قتل کیا گیا؟اسی کشمکش میں وہ سکول میں داخل ہوئے،وہ ایک ذہین اور فطین طالب علم تھے لیکن سکول میں بھی طلبہ اور اساتذہ کا رویہ انتہائی ہتک آمیز ہوتا تھا،ان کی سیاہ رنگت اساتذہ کی نظر میں انہیں بے توقیر کر رہی تھی،وہ اساتذہ کے دل میں اپنی قابلیت سے جگہ نہ بنا سکے ،ایک دن کلاس میں استاد نے پوچھا کہ کس نے کیا بننا ہے کسی نے ڈاکٹر کسی نے انجنئیر اور کسی نے کہا میں پائلٹ بننا چاہتا ہوں مالکوم إكس کی باری آئی تو انہوں نے جواب دیا میں وکیل بنوں گا استاد سمیت پوری کلاس ہنس پڑی،

This post has been Liked 1 time(s) & Disliked 0 time(s)