مسلسل دو طیاروں کے گرنے میں حیرت انگیز مماثلت،چین نے اپنی ائرلائنز کو بوئنگ 737 کااستعمال روکنے کے احکامات جاری کر دیئے

سول ایوی ایشن ایڈمنسٹریشن چائنہ کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں کہا کہ چین نے ایتھوپین ائرلائن طیارے کے حادثے کے بعد اپنی ائرلائنز کو بوئنگ 737 میکس طیارے کا استعمال عارضی طور پر معطل کرنے کے احکامات جاری کر دیئے ان طیاروں کا آپریشن شروع کرسکتی ہیں

تفصیلات کے مطابق سول ایوی ایشن ایڈمنسٹریشن چائنہ کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ ائرلائنز کو یہ ہدایات دے دی گئی ہیں کہ وہ بوئنگ اور امرکی فیڈرل ایوی ایشن انتظامیہ سے رابطے اور ان طیاروں کی محفوظ پروازوں کو یقینی بنانے کے بعد دوبارہ ان طیاروں کا آپریشن شروع کر سکتی ہیں ، حالیہ دونوں حادثات نے 737 ایٹ طیاروں کے ہیں اور دونوں میں کافی حد تک یکسانیت بھی ہے یہی وجہ ہے کہ اب مزید خطرات کو مول نہیں لیا جا سکتا ہے۔ واضح رہے کہ اتھوپیا ایئرلائن کا مسافر طیارہ کریش ہونے کی وجوہات معلوم کرنے کیلئے امریکہ کی تحقیقاتی ٹیم ایتھوپیا جائے گی۔

امریکی نیشنل ٹرانسپورٹیشن سیفٹی بورڈ کے 4 اہلکار مقامی حکام کے ساتھ مل کر کام کریں گے۔واشنگٹن میں فیڈرل ایوی ایشن انتظامیہ کا بھی یہ کہنا ہے کہ حادثہ کیوں اور کن حالات میں ہوا اس پر غور کیا جا رہا ہے۔گزشتہ روز ایتھوپین ائیرلائن کا مسافر طیارہ عدیس ابابا سے کینیا کے دارالحکومت نیروبی جاتے ہوئے گر کر تباہ ہوا تھا۔ طیارے میں8 چینی باشندوں سمیت 33 ملکوں کے 149 مسافر اور عملے کے آٹھ افراد سوارتھے۔ائیرلائن انتظامیہ کی جانب سے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر سے جاری پیغام میں بتایا گیا کہ حادثے کی وجہ سے کوئی شخص بھی زندہ نہیں بچ سکا۔

This post has been Liked 0 time(s) & Disliked 0 time(s)